نیا اسلام آباد انٹر نیشنل ائیر پورٹ

براے مہربانی شیر کریں ، شکریہ

موجودہ دور رابطہ کا دور ہے۔ عصرِ حاضر کا انسان دنیا کو اپنی نظر سے دیکھنا چاہتا ہے۔ اسی انسانی جذبے کی تسکین کے لئے دنیا بھر میں مختلف ذرائع آمدورفت کو فروغ دیا جاتا رہا ہے، ہوائی سفر بھی اسی سلسلے کی اک کڑی ہے۔

   اسلام آباد کے نئے ائیر پورٹ نے پاکستانی عوام کے لئے ایک تازہ ہوا کے جھونکے کا کام کیا ہے۔   اس ائیر پورٹ کا سنگِ بنیاد  7 ؍ اپریل 2007 میں صدر پرویز مشرف اور اس وقت کے وزیرِ اعظم  شوکت عزیز نے رکھا تھا۔ 

یہ پاکستان کا سب سے پہلا گرین فیلڈ ائیر پورٹ ہے۔ اس کا ڈیزائن سنگا پور اور فرانس کی کمپنیوں نے تیار کیا تھا۔ اس عمارت کا آرکیٹیکچر برطانوی آرکیٹیکٹ نے اور پراڈکٹ مینیجمنٹ امریکہ کی ایک مشہور کمپنی لوئیس برجر نے کی ہے۔

کیا آپ اس کی خصوصیات کے بارے میں جاننے کے خواہش مند ہیں؟  تو آئیےاس کے بارے میں کچھ جانتے ہیں۔

بین الاقوامی معیار

 اس وقت یہ ائیر پورٹ تیاری کے مراحل میں ہے لیکن بہترین منصوبہ بندی نے اس کی شہرت کو ابھی سے چار چاند لگا دئیے ہیں۔ اس ائیر پورٹ کی خاص بات یہ ہے کہ یہ پاکستان کے کسی بھی ائیر پورٹ سے بڑا  اور جدید ہے۔ طیاروں پر سوار ہونے اور اترنے کے لئے 15 بیجز  ہیں جو کسی بھی صورت کسی بین الا قوامی معیار سے کم نہیں۔  سب سے نچلی منزل پر مسافروں کی آمد کا انتظام ہے،  ساتھ ہی فضائی کمپنیوں کے دفاتر ہیں۔ اس منزل پر دوسرے ہوائی اڈوں کے برعکس پہلے بین الاقوامی آمد اور پھر اندرونِ ملک مسافروں کی آمد کا راستہ ہے۔  ان کے سامان کی وصولی کے حوالے سے سہولت کے لئے 8 بیلٹ بنائے گئے ہیں تاکہ سامان کی وصولی آسان ہو سکے۔

جدید سہولیات سے آراستہ

  سب سے اوپری منزل پرمسافروں کی روانگی کا انتظام کیا گیا ہے۔  درمیانی منزل پر مسافروں کی سہولت کی خاطر فوڈ کورٹ، سینما اور دیگر سہولیات کا انتظام کیا گیا ہے۔ بچوں کی تفریح کے لئے پلے ایریا، جدید سہولیات کی حامل مسجد کے ساتھ ساتھ  بہترین معیار کے ریسٹورنٹ کا بھی انتظام کیا گیا ہے۔ با ذوق مسافروں کے لئے وزیٹر ز گیلری کا اہتمام بھی کیا گیا ہے۔ سب سے دلچسپ بات یہ ہے کہ اگر دورانِ سفر آپ کا موبائل بند ہو جائے یا اس کی چارجنگ ختم ہو جائے تو مسافروں کی سہولت اور ان کے سامان کی حفاظت کی خاطر ایسے کیبنٹس بنائے گئے ہیں جو کہ آپ کے فنگر پرنٹس سے ہی کھل سکیں گے۔ اس طرح آپ  اپنا موبائل چھوڑ کر آزادانہ کسی بھی ضروری کام کے لئے جا سکتے ہیں۔

 وسیع و عریض رقبہ

ٹرمینل ایریا کے اندر فور اسٹار ہوٹل کی بھی تعمیر کا منصونہ بھی تیار کیا گیا ہے جو کہ ٹرانزٹ مسافروں کی سہولت کے لئے ہوگا۔  ائیر پورٹ میں 72  بین الاقوامی چیک انز اور ایک بہت بڑی پارکنگ ہے جس میں ڈھائی ہزار گاڑیاں کھڑی کی جاسکتی ہیں۔ اسے اسلام آباد اور پشاور کی موٹر وے سے بھی وابستہ کیا جائے گا تاکہ پاکستانی عوام کو ممکنہ حد تک سہولت دی جا سکے۔  یہ ائیر پورٹ  دنیا کے کسی بھی ائیر کرافٹ کو اپنے رن وے پر اتارنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

امید کی جارہی ہے کہ جو ائیر لائن کمپنیاں کبھی پاکستان میں نہیں آئی تھیں وہ بھی اب یہاں فلائٹ آپریشنزکر سکیں گی۔

براے مہربانی شیر کریں ، شکریہ

نیا اسلام آباد انٹر نیشنل ائیر پورٹ” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں